Friday, March 6, 2015

اقوالِ زریں وال پیپر


کافی دن ہوئے کچھ لکھا نہیں۔ البتہ ایک علیحدہ پراجیکٹ کے طور پر ماٹیویشنل اقوال زریں ٹویٹر پر ڈال رہا ہوں۔ دو چار دن بعد ایک آدھا وال پیپر بنا رہا ہوں۔ آنے والے دنوں میں ہفتہ وار دو وال پیپر بنانے کا ارادہ ہے۔ اسکے علاوہ یہ اکائونٹ آٹو  پائلٹ پر چلا کریگا۔ یہاں مختلف گیلریز بنا کر رکھنے کا ارادہ ہے، لاکھ پچاس ہزار فالورز ہو جائیں تو اچھی ٹریفک مل جاتی ہے۔ 

 آپ بھی ضرور فالو کریں، انشاءاللہ اچھی کوالٹی کے اقوال زریں، اور معلوماتی تفریحی مواد پیش خدمت کیا جائیگا۔

@MotivateQuo


 ابھی تک جو کام کیا حاضر خدمت ہے۔


کوئی بھی دوستی اعتماد کے بغیر نہیں چل سکتی، اور اعتماد کھرے پن کے بغیر نہیں آتا۔
سٹیفن کووے(انتہاری کارگر لوگوں کی سات عادتیں)۔
Seven Habits of Highly Effective People



"کوئی خاص خواب نہ دیکھا تھا، بس یہ جذبہ تھا کہ اپنی ابتدائی تقدیر کو قبول نہیں کرنا۔ " 

مہید التراد، شامی فرانسیسی مسلمان کامیاب انسان، کمپیوٹر سائنس پی ایچ ڈی،  کاروباری، رگبی ٹیم کا مالک۔




"ایک مرتبہ ہم اپنی حدوں کی پہچان کر لیں تو پھر انکو توڑ بھی لیتے ہیں۔"

بابائے ایٹم بم و جدید فزکس، حضرت آئن سٹائن۔



"کونجیں اتنی لمبا سفر کیسے کر لیتی ہیں؟ تنظیم سے۔"

نعیم اکرم 


"سکون کرو اور او ڈیسک پر لگے رہو"
نعیم اکرم۔

"سکون کرو اور کرکٹ ورلڈ کپ مت دیکھو۔"
نعیم اکرم

"معجزہ یہ ہے کہ جتنا ہم دیتے ہیں، اتنا ہمیں اور ملتا ہے"

لینرڈ نیموئے۔ 





5 comments:

  1. "ایک مرتبہ ہم اپنی حدوں کی پہچان کر لیں تو پھر انکو توڑ بھی لیتے ہیں ۔
    میں سوچتی ہوں ۔اپنی حد کی پہچان انسان کو لامحدود وسعت عطا کرتی ہے بنے بنائے راستوں پر چلنے والے ہمیشہ جوڑ توڑکی بھول بھلیوں میں گھرے رہتے ہیں۔نئے راستے بنانے والے بےشک منزل پرنہ بھی پہنچ پائیں لیکن راہنمائی ضرور کر دیتے ہیں۔

    ReplyDelete
    Replies
    1. اسی بات کو میں نے کچھ عرصہ پہلے یوں محسوس کیا اور ٹویٹ بھی کیا۔
      Know your limits and touch the horizon.
      آئن ساٹائن کا یہ قول پہلی بار آپ کے اسی بلاگ سے پڑھا ابھی ابھی ۔

      Delete
    2. یہ کائنات ایک مربوط نظام ہے۔ اسی لئے جیسا ہم کرتے ہیں ویسا ہی بھرتے ہیں۔

      Delete

  2. "معجزہ یہ ہے کہ جتنا ہم دیتے ہیں، اتنا ہمیں اور ملتا ہے"
    یہ معجزہ ضرور ہے مگر ان اذہان کے لیے جو غیب سے پہلے اپنی عقل پر ایمان رکھتے ہیں۔ بےشک ہمارا ایمان بھی ابھی تقویت کے سب سے نچلے درجے پر ہے لیکن دل سے مانتے ضرور ہیں کہ
    "دیتے جاؤ اور پاتے جاؤ ۔اس سے پہلے کہ نہ دے سکو اور نہ پا سکو"
    "دیتے جاؤ اورپاتے جاؤ اس سے پہلے کہ نہ تم دے سکو اور نہ پا سکو "
    دسمبر 5 ، 2012
    (feel these lines in each and every aspect of life)
    http://noureennoor.blogspot.com/2012/12/blog-post_5.html

    ReplyDelete
  3. اپنے من میں ڈوب کر پا جا سراغ زندگی۔۔۔
    آپ کے بہت سارے کینٹو کی ایمیلیں آئی ہیں، وقت نکال کر تسلی سے جواب لکھوں گا۔۔۔ آپکی توجہ کا شکریہ

    ReplyDelete

کھلے دِل سے رائے دیں، البتہ کھلم کھلی بدتمیزی پر مشتمل کمنٹ کو اڑانا میرا حق ہے۔

Pak Urdu Installer

Pak Urdu Installer